بنیادی صفحہ / کاروبار / سعودی عرب سے سالانہ ڈیڑھ ارب ڈالر مالیت کے تیل کی سہولت دستیاب ہوگئی ہے

سعودی عرب سے سالانہ ڈیڑھ ارب ڈالر مالیت کے تیل کی سہولت دستیاب ہوگئی ہے

رپورٹ: اے پی ایس
اسلام آباد: حکومت نے اعلان کیاہے کہ سعودی عرب سے سالانہ ڈیڑھ ارب ڈالر مالیت کے تیل کی سہولت دستیاب ہوگئی ہے۔ وزیر توانائی حماد اظہر کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے ریونیو اینڈ فنانس ڈاکٹر وقار مسعود نے بتایا کہ تاخیری ادائیگیوں پر سعودی عرب سے سالانہ ڈیڑھ ارب ڈالر مالیت کے تیل کی فراہمی کا اعلان کردیا ہے۔تاہم انہوں نے تیل کی سہولت کی تفصیلات اور 3 سال قبل طے پانے والے 3 ارب ڈالر کے سمجھوتے میں کمی کی وجوہات کے حوالے سے مزید بات کرنے سے انکار کردیا۔مذکورہ سمجھوتے پر دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعلقات میں آنے والی دراڑ کے باعث عملدرآمد نہیں ہوسکا تھا۔معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ حکومت نے آئندہ مالی سال کے دوران 6 کھرب 10 ارب روپے پیٹرولیم لیوی اکٹھا کرنے کے حوالے سے بہت حقیقت پسندانہ تخمینہ لگایا ہے اس کے باوجود کچھ ناقدین اسے غیر حقیقت پسندانہ کہہ کر دعوی کررہے ہیں کہ لیوی کو 4 سے 5 روپے بڑھا کر 25 روپے لیٹر کردیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے 4 ماہ تک پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں مستحکم رکھیں حالانکہ بین الاقوامی منڈیوں میں قیمتوں میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ڈاکٹر وقار مسعود نے کہا کہ ‘ہم نے اس سیکٹر کی استعداد اور متوقع ترقی کی بنیاد پر اپنے اہداف مقرر کیے ہیں، آئندہ مالی سال کے آغاز میں کچھ مشکلات ہوسکتی ہیں لیکن آگے جا کر اس میں کمی ہوجائے گی۔انہوں نے کہا کہ ایران سے پابندی ختم ہونے سے تیل کی پیداوار بڑھنے میں مدد ملے گی جس کا قیمتوں پر بہت مثبت اثر پڑے گا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ریونیو کا تخمینہ بھی حقیقت پسندانہ ہے اور 25 دیگر مدات بھی ہیں جنہیں آئندہ مالی سال کا بجٹ بناتے ہوئے مدِ نظر نہیں رکھا گیا۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے صرف ایل این جی پر چلنے والے پاور پلانٹس کی نجکاری کا ہدف بنایا تھا لیکن بہت سی دیگر ٹرانزیکشن آئندہ مالی سال میں مکمل ہوں گی جس میں ففتھ جنریشن ٹیلی کمیونکیشن لائسنسز اور موجود لائسنسز کی تجدید شامل ہے۔

Like , Share , Tweet & Follow

تعارف: admin

x

Check Also

پاکستان اسٹاک ایکسچینج : چار سال کے بعد 48 ہزار کی سطح عبور کر گیا

رپورٹ: اے پی ایس پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے تیز رفتاری کے ساتھ ...