بنیادی صفحہ / قومی / کورونا وائرس: کراچی میں مزید 2 اموات، ملک میں متاثرین 1526 ہوگئے

کورونا وائرس: کراچی میں مزید 2 اموات، ملک میں متاثرین 1526 ہوگئے

ایسوسی ایٹڈ پریس سروس،اے پی ایس اسلام آباد
اتوار 29 مارچ 2020
اتوار کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں اب تک مزید 34 افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے اور متاثرین کی کل تعداد 1542 ہے۔پنجاب کورونا سے سب سے زیادہ متاثرہ صوبہ ہے۔ 12 نئے مریض کے ساتھ یہاں مصدقہ متاثرین کی تعداد 570 ہوگئی ہے۔ ان میں ڈی جی خان میں 207 زائرین، ملتان میں 79 زائرین اور لاہور میں 119 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔آزاد کشمیر میں مزید 4 افراد میں کووڈ 19 کے نتائج مثبت آئے ہیں جن میں 3 خواتین شامل ہیں۔ اس کے بعد خطے میں کل متاثرین 6 ہوگئے ہیں۔ہمارے نمائندہ ایسوسی ایٹڈ پریس سروس کے مطابق سندھ میں 481، خیبر پختونخوا میں 188، بلوچستان میں 138، گلگت بلتستان میں 116 اور دارالحکومت اسلام آباد میں کورونا وائرس کے 43 متاثرین ہیں۔تاحال ملک بھر میں کورونا سے 13 ہلاکتیں ہوچکی ہیں جبکہ 11 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔ 28 افراد کووڈ 19 میں مبتلا ہونے کے بعد صحت یاب ہوچکے ہیں۔کراچی میں لاک ڈان کے دوران لوگوں کی نقل و حرکت محدود رکھنے کے لیے پولیس کی جانب سے شہریوں کی مانیٹرنگ کے لیے ایک ایپ متعارف کرائی گئی ہے۔ڈی آئی جی آپریشنز مقصود میمن کے مطابق یہ ایپ پولیس سکیورٹی اینڈ ایمرجنسی سروس ڈویژن نے متعارف کرائی ہے اور اس کا مقصد شہریوں کی نقل و حرکت محدود رکھنا ہے۔پولیس کے بیان میں کہا گیا ہے کہ لاک ڈان کے دوران بلاضرورت باہر نکلنے پر گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔ ایپ میں قومی شناختی کارڈ نمبر، فون نمبر، لوکیشن اور گھر سے نکلنے کی وجہ سے متعلق شہریوں کی معلومات درج ہوگی۔ایپ چیک پوائنٹس پر افسران کے موبائل میں انسٹال ہوگی اور پولیس اہلکارروزانہ شہریوں کی نقل وحرکت کا ڈیٹا محفوظ کرتی رہے گی۔ڈی آئی جی آپریشنز نے کہا ہے کہ شہری دن میں 2 سے زیادہ بار نقل و حرکت نہیں کر سکیں گے۔ ثابت ہونے پر قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ایپ میں کسی بھی شہری کے کوائف درج کئے جا سکیں گے۔سندھ حکوت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ کورونا وائرس کے بڑھتے متاثرین کے پیش نظر صوبے میں 14 آئی سی یوز یعنی انتہائی نگہداشت کے یونٹس قائم کیے جائیں گے۔ایسوسی یٹڈ پریس سروس اے پی ایس نیوز ایجنسی کے مطابق کراچی میں ایک میٹنگ کے دوران وزیر اعلی مراد علی شاہ نے کہا کہ قائم کیے جانے والے 14 آئی سی یوز میں وینٹی لیٹرز، مانیٹرز اور دیگر سامان دستیاب ہوگا۔میٹنگ کے دوران آئی جی سندھ نے صوبے میں لاک ڈان کی صورتحال پر بریفنگ دی۔ہر سال انفلوئنزا وائرس سے 650،000 افراد ہلاک ہوجاتے ہیں۔ اب تک 7 ستمبر 2019 سے لے کر مارچ 2020 کے اختتام تک ، تقریبا 30،000 افراد کورونا سے مر چکے ہیں۔ صرف نمبر دکھا رہے ہیں ، کسی بھی چیز کی شدت پر بحث نہیں کررہے ہیں۔ تاہم یہ بھی ایک لمحہ فکریہ ہے دنیا میںکرونا وائرس سے زیادہ لوگ افسردگی ، تنا اور بھوک میں مر رہے ہیں۔تاہم یہ کسی بھی بحث کا حصہ نہیں

Like , Share , Tweet & Follow

تعارف: admin

x

Check Also

سب سے بڑا خطرہ بھوک سے لوگوں کی ہلاکتیں ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان

اب نہیں کوئی بات خطرے کی اب سبھی کو سبھی سے خطرہ ...