بنیادی صفحہ / انٹرٹینمنٹ / ممتاز مزاح نگار مشتاق یوسفی کراچی میں انتقال کرگئے

ممتاز مزاح نگار مشتاق یوسفی کراچی میں انتقال کرگئے

کراچی: ایسوسی ایٹڈ پریس سروس(اے پی ایس)ممتاز مزاح نگار اور دانشور مشتاق احمد یوسفی 94 سال کی عمر میں کراچی میں انتقال کرگئے۔ کسی دانشور نے ان کی خدمات کے عوض انہیں خراج تحسین کے طور پر کہا تھا کہہم عہد یوسفی میں زندہ ہیں لیکن یہ عہد بھی بدھ کی شام کراچی میں اپنے اختتام کو پہنچا۔مشاق احمد یوسفی کئی ماہ تک نمونیے سے لڑتے لڑتے بلاخر ہار ہی گئے۔نمونیے سے لڑنے کے لئے ان کی کمزوری اور طویل العمری آڑے آگئی۔ وہ کراچی کے ایک اسپتال میں زیر علاج تھے۔مشتاق احمد یوسفی 4ستمبر 1923 کو بھارتی ریاست راجستھا ن کی پنک سٹی جے پور میں پیدا ہوئے تھے۔تعلیم علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اور آگرہ یونیورسٹی سے حاصل کی۔ تقسیم کے بعد کراچی آبسے۔ پیشے کے اعتبار سے وہ بینکار تھے اور کئی بینکوں میں خدمات انجام دیں۔مشاق احمد یوسفی کی پانچ شہرہ آفاق کتابیں ہیں جن میں چراغ تلے 1961 میں خاکم بدہن 1969میں، زرگزشت 1976،آبِ گم 1990، شامِ اور آخری کتاب شعرِ یاراں 2014 میں شائع ہوئی تھی۔انہیں حکومت پاکستان کی جانب سے ادب میں نمایاں کارکردگی پر ہلال امتیاز اور ستارہ امتیاز سے بھی نوازا گیا تھا۔

Like , Share , Tweet & Follow

تعارف: admin

x

Check Also

شعری مجموعہ” وصال یار” کی شاعرہ یسری وصال کیلئے ایوارڈ کا اجراء

اسلام آباد(اے پی ایس)نیشنل پریس کلب کے زیراہتمام صحافت کے مختلف شعبہ ...