بنیادی صفحہ / قومی / معاشی عدم تحفظ کا شکار پی ایچ ڈی افراد کا وزیر اعظم نوٹس لیں

معاشی عدم تحفظ کا شکار پی ایچ ڈی افراد کا وزیر اعظم نوٹس لیں

رپورٹ: ایسوسی ایٹڈ پریس سروس (اے پی ایس)
پی ایچ ڈی ڈاکٹر ایسوسی ایشن نے حکومت وقت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ پی ایچ ڈیز کے مسائل ہنگامی بنیاد پر حل کرے اور وزیراعظم عمران کان ان کو درپیش مسائل کا از خود نوٹس لیں۔تفصیلات کے مطابق پی ایچ ڈی ڈاکٹر ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر شیر افضل نے نیشنل پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چیئرمین ایچ ای سی نےIPFPکے تحت بے روگار پی ایچ ڈیز کو سرکاری یونیورسٹیوں اور دیگر تعلیمی اداروں میں تعینات کرنے کے وعدہ کیا تھا اس کے علاوہ بھی کئی وعدے کیے تھے مگر بد قسمتی سے کسی ایک وعدے کو بھی پورا نہیں کیا، انہوں نے کہاکہ ایک طرف پی ایچ ڈیز کو روزگار فراہم کرنے کی ذمہ داری نہیں لی جاتی دوسری جانب ان پر بیرون ممالک جاکر ملازمت کرنے پر بھی پابندی لگا دی جاتی ہے اور جو لوگ باہر سے پی ایچ ڈی کر کے آ چکے ہیں ان کو بھی بیرون ممالک میں بے روزگاری کی مد میں عدالتوں میں گھسیٹا جا رہا ہے جبکہ اپنے ملک میں بھی ان کے لئے روزگار کا کوئی ذریعہ نہیں فراہم کیا جاتا انہوں نے مزید کہا کہ ایچ ای سی کے اپنے قانونی معیار کے مطابق یونیورسٹیوں میں 20 طلبا کیلئے ایک پی ایچ ڈی کا ہونا ضروری ہے مگر ایچ ای سی اپنے ہی بنائے قانون پر عمل درآمد کروانے میں بری طرح ناکام رہی ہے، یہاں تک کہ سرکاری یونیورسٹیاں بھی کھلے عام ایچ ای سی کی خلاف ورزیاں کر رہی ہیں اور وزیٹنگ فکیلٹی کو 10000 روپے ماہانہ پر چلا رہی ہیں جس سے معیارتعلیم بری طرح متاثر ہو رہا ہے، وزیٹنگ فکیلٹی کیلئے ایچ ای سی کا بھی دہرا معیار ہے اپنے پورٹل میں وہ اسے بر سر روزگار قرار دیتی ہے لیکن دوسری جانب وزیٹنگ فیکلٹی کو باقاعدہ تجربے کے طور پرتسلیم نہیں کرتی جبکہ بیرون ملک پوسٹ ڈاک وزیٹنگ فیکلٹی پر لاگو بھی نہیں کرتی، ینیورسٹیوں میں بھی انتظامیہ میں ایسے مافیا ہیں جو ذاتی من پسند لوگوں کی تقرری کیلئے باقاعدہ جانبدارانہ طرز عمل اختیار کرتے ہوئے میرٹ کی دھجیاں اڑا رہے ہیں اور اصل حقداروں کو ان کے حق سے محروم کیا جا رہا ہے، پی ایچ ڈی ڈاکٹر ایسوسی ایشن کی جنرل سیکرٹری ڈاکٹر عافیہ افتحار نے پریس کانفرنس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایک جانب خواتین کے حقوق کی معاشرتی سطح پر بات کی جاتی ہے مگر دوسری جانب تعلیم یافتہ خواتین کو بے روزگاری اور غیر محفوظ مستقبل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ دیگر شعبوں کی طرح پی ایچ ڈیز خواتین کیلئے بھی کوٹہ مختص کرے، انہوں نے کہا کہ حیران کن امر یہ ہے کہ اس وقت بھی ملک میں 36000 پی ایچ ڈیز کی آسامیاں خالی ہیں لیکن 1000 پی ایچ ڈیز سڑکوں پر دھکے کھا رہے ہیں لیکن نا جانے کیوں حکومت ایک ہزار لوگوں کو نوکریاں فراہم کرنے میں پس و پیش ہے انہوں نے حکومت وقت سے مطالبہ کیا کہ وہ پی ایچ ڈیز کے مسائل ہنگامی بنیاد پر حل کرے اور وزیراعظم ان کو درپیش مسائل کا از خود نوٹس لیں۔

Like , Share , Tweet & Follow

تعارف: admin

x

Check Also

ملک گیر مہنگائی سے عوام اہم نشانے پر

کیا غریب عوام روٹی کم کھائے اور بچوں کو دودھ پلانا چھوڑ ...