بنیادی صفحہ / بین الاقوامی / دھمکیاں اور خطرات کے سبب پیغمبرِ اسلام کے خاکوں کا مقابلہ منسوخ

دھمکیاں اور خطرات کے سبب پیغمبرِ اسلام کے خاکوں کا مقابلہ منسوخ

اسلام آباد: ایسوسی ایٹڈ پریس سروس (اے پی ایس)
نیدرلینڈز میں انتہائی دائیں بازو کے قانون ساز گیرٹ وائلڈر نے قتل کی دھمکیوں اور دوسروں کی زندگیوں کو لاحق خطرات کے سبب پیغمبر اسلام کے خاکوں کا مقابلہ منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے۔گریٹ وائلڈر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اسلامی تشدد کے خطرات کے سبب میں نے فیصلہ کیا ہے کہ اب کارٹون بنانے کا مقابلہ نہیں ہو گا۔پیغبرِ اسلام کے خاکے بنانے کا یہ مقابلہ رواں سال نومبر میں نیدر لینڈ کی پارلیمان میں گریٹ وائلڈر کی سیاسی جماعت کے دفتر میں منعقد ہونا تھا۔خاکوں کا مقابلے کے انعقاد کے اعلان کے بعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں شدید احتجاج کیا گیا تھا اور مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان کا اس سلسلے میں لاہور سے اسلام آباد کی جانب احتجاجی لانگ مارچ بھی جاری ہے۔تحریک لبیک کے ترجمان نے بتایا کہ ان کا احتجاج جاری ہے اور شوری مقابلے کی منسوخی کے اعلان کا جائزہ لے رہی ہے۔لیکن پاکستان سمیت دنیا بھر سے مسلمانوں کا شدید ردعمل سامنے آنے کے بعد ان مقابلوں کو منسوخ کرنے کا اعلان کردیا گیا ہے۔ادھر پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مقابلے کی منسوخی کو اخلاقی فتح قرار دیا ہے اور انھوں نے کہا کہ امتِ مسلمہ کے تعاون سے وہ اس معاملے پر او آئی سی اور اقوام متحدہ میں بھرپور آواز اٹھائیں گے۔نیدر لینڈز کے قانون ساز گریٹ وائلڈر نے جمعرات کو رات دیر گئے جاری کیے گئے بیان میں کہا ہے کہ اسلامی تشدد کے خطرات کے سبب اب کارٹون بنانے کا مقابلہ نہیں ہو گا۔وائلڈر کا کہنا ہے کہ وہ رواں سال نومبر میں ہونے والے اس مقابلے کے ذریعے دوسروں کو بھی خطرات سے دوچار نہیں کرنا چاہتے ہیں۔اسلام مخالف رجحانات رکھنے والے نیدر لینڈ کے قانون ساز کو اپنے نظریات کے سبب قتل کی دھمکیاں ملی ہیں اور انھیں خصوصی حفاظتی تحویل میں رہنا پڑتا ہے۔ پیغبرِ اسلام کے خاکے بنانے کا یہ مقابلہ ہالینڈ کی پارلیمان میں منعقد ہونا تھا۔دوسری جانب پاکستان وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مذہبی سیاسی جماعت تحریکِ لیبک کے وفد سے ملاقات میں کہا کہ گستاخانہ خاکوں پر تحریک لیبیک نے اپنا احتجاج بھرپور طریقے ریکارڈ کروایا ہے۔انھوں نے کہا کہ ایسے واقعات انتہا پسندی کو فروغ دیتے ہیں اور امتِ مسلمہ کے جذبات مجروع ہوتے ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ حکومت نے مسلمان ممالک کی تنظیم او آئی سی اور مسلمان ممالک کے وزارئے خارجہ کو متفقہ حکمتِ عملی بنانے کے لیے خطوط لکھے ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ او آئی سی کے ذریعے اس پر امتِ مسلملہ کی متفقہ موقف سے دنیا کو آگاہ کرنا چاہتے ہیں۔ وزیر خارجہ نے تحریک لیبک سے اپنا احتجاج ختم کرنے کی درخواست کی ہے۔ادھر وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نیدرلینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا معاملہ ہر مسلمان کا مسئلہ ہے۔اپنے ویڈیو پیغام میں انھوں نے کہا کہ مغرب کے لوگوں کو ہمارے جذبات کا احساس اور ادراک نہیں ہے اور مسلمانوں کو یک زبان ہو کر اپنا موقف مغرب کو سمجھانا ہو گا۔

Like , Share , Tweet & Follow

تعارف: admin

x

Check Also

ایران: پریڈ پر حملے میں کم از آٹھ فوجی ہلاک

تہران: ایسوسی ایٹڈ پریس سروس ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق ...